خوفناک عمارت از ابن صفی

0

سوٹ پہن چکنے کے بعد عمران آئینے کے سامنے لچک لچک کر ٹائی باندھنے کی کوشش کررہا تھا ۔ ”اوہنہ ….پھر وہی ….چھوٹی بڑی ….میں کہتا ہوں ٹائیاں ہی غلط آنے لگی ہیں ۔ “ وہ بڑبڑاتا رہا ۔ ”اور پھر ٹائی ….لاحول والا قوة ….نہیں باندھتا !“
یہ کہہ کر اس نے جھٹکا جو مارا تو ریشمی ٹائی کی گرہ پھسلتی ہوئی نہ صرف گردن سے جالگی بلکہ اتنی تنگ ہوگئی کہ اس کا چہرہ سرخ ہوگیا اور آنکھیںابل پڑیں ۔ ”بخ ….بخ ….خیں“….اس کے حلق سے گھٹی گھٹی سی آوازیں نکلنے لگیں اور وہ پھیپھڑوں کا پورا زور صرف کرکے چیخا۔”ارے مرا ….بچاو سلیمان

 

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: