امید از افراح خان

0
یہ ایک اندھیری رات کا منظر تھا ۔۔۔طوفانی بارش زور شور
سے برس رہی تھی۔۔۔
بارش نے پسماندہ علاقوں میں تباہی مچا رکھی تھی۔۔۔
اچانک سنسان سڑک پر ایک بس آ کر رکی۔۔۔
جس میں سے ایک نسوانی وجود اتر کر تیز تیز قدم اٹھاتا سڑک پار کر کے تنگ گلی میں داخل ہو گیا۔۔۔ چہرہ چادر سے مکمل چھپا رکھا تھا۔۔۔
وہ برستی بارش میں مکمل بھیگ چکی تھی۔۔۔ پھر بھی تیز قدم اٹھاتی وہ گھر کی جانب بڑھتی چلی جا رہی تھی ۔۔۔
جلدی میں گلی کے نکڑ پہ مڑتے اچانک وہ سامنے سے آتے کسی بھاری بھر کم وجود سے ٹکرائی۔۔۔۔اسے اپنا سر ٹکرانے سے اور اس نامعلوم افراد سے اٹھتی شراب کی بدبو سے گھومتا ہوا محسوس ہوا۔۔
جیسے ہی اس نے سنبھل کر دیکھا ,,,
سامنے کھڑے شخص کو.. تو دل کی دھڑکن بے ترتیب ہونے لگی.. آنکھوں میں خوف کے سائے واضح نظر آرہے تھے۔۔۔
یہ برستی بارش یک دم بھیانک روپ دھار چکی تھی..

 

 

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Novels

Signup for Novels and get notified when we publish new Novel for free!




%d bloggers like this: